ایک ایسے پاکستانی کو جیل سے آزادی ملنے والی ہے کہ والدین گھبرا کر اپنی بچیوں کو گھروں سے باہر ہی نہ نکلنے دیں گے کیونکہ۔۔۔


برطانیہ میں ایک ایسے سفاک مجرم کوسزا پوری ہونے سے 17سال قبل ہی جیل سے رہا کیا جا رہا ہے کہ والدین خوفزدہ ہو کر اپنی بچیوں کو گھر سے نکلنے ہی نہ دیں گے۔ برطانوی اخبار دی میٹرو کی رپورٹ کے مطابق بدقسمتی سے یہ سفاک مجرم پاکستانی نژاد مبارک علی ہے جو کم سن بچیوں سے جنسی زیادتی کرنے والے گروہ کا سرغنہ تھا۔ اسے عدالت نے 22سال قید کی سزا سنائی تھی اور ابھی اسے 5سال ہی جیل میں گزرے تھے کہ اب اسے رہا کیا جا رہا ہے جس نے متاثرہ بچیوں کے والدین سمیت برطانوی شہر ٹیلفرڈ کے لوگوں کو خوفزدہ کر دیا ہے۔

اس درندہ صفت انسان نے اپنے گروہ کے ساتھ مل کر ٹیلفرڈ میں ہی متعدد بچیوں کی زندگی برباد کی تھیں۔ ان میں کئی بچیوں کی عمر 13سال سے بھی کم تھی۔ رپورٹ کے مطابق 34سالہ مجرم کو 2013ءمیں گرفتار کیا گیا تھا۔ ٹیلفرد کی ایم پی لوسی ایلن کا کہنا ہے کہ”علی کی رہائی ایک غلط اقدام ہے۔ وہ رہا ہو کر واپس اسی گروپ میں شامل ہو جائے گا جس نے کئی بچیوں کی زندگی برباد کی۔“ واضح رہے کہ یہ گروپ کم عمر لڑکیوں کو ورغلا کر اغواءکرتا، انہیں منشیات دے کر جنسی زیادتی کا نشانہ بناتا اور بعد ازاں جسم فروشی کا دھندہ بھی کرواتا تھا۔

You cannot copy content of this page