3نوجوان لڑکیوں کو مذہبی رہنما کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے جرم میں گرفتار کرلیا گیا


زمبابوے (اردو آفیشل 27جولائی 2017)زمبابوے میں ایک پادری نے کسی کو قرض دے رکھا تھا لیکن جب وہ قرض خواہی کیلئے اس قرض دار کے گھر گیا تو اس کے ساتھ ایسا شرمناک کام کردیا گیا کہ کوئی مرد اس کا سوچ بھی نہیں سکتا.میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق پادری اس گھر میں گیا تو وہاں 3 لڑکیاں 21 سالہ سینڈر انکوبے‘23 سالہ ریامو ہیتسی اور 25 سالہ مونگیوی پفو موجود تھیں.

ان تینوں لڑکیوں نے پادری کو پکڑ لیا اور اندر لیجا کر اس کیساتھ جنسی زیادتی کرڈالی.  پولیس نے واقع کی رپورٹ کیے جانے پر تینوں لڑکیوں کو گرفتار کرکے عدالت میں پیش کردیا ہے. پراسیکیوٹر نے عدالت میں بتایا کہ”پادری جب گھر پر گیا تو لڑکیوں نے اسے کہا کہ اندر آکر رقم لے لو.جب وہ اندر گیا تو انہوں نے اس پر حمہ کردیا‘ دو لڑخیوں نے اسے پکڑ کر لٹائے رکھا جبکہ تیسری اس کے ساتھ زیادتی کرتی رہی.“ رپورٹ کے مطابق لڑکیوں نے عدالت کو بتایا کہ ”یہ پادری علاقے میں خواتین کو برہنہ حالت میں دیکھا کرتا تھا جب وہ نہارہی ہوتی تھیں.منع کرنے پر یہ کہتا کہ میں نیک آدمی ہوں‘میرے دیکھنے سے کچھ نہیں ہوتا.ہم یہ دیکھنا چاہتی تھیں کہ آیا  یہ واقعی نیک ہے اور وقعی خواتین کو برہنہ دکھ کر اسے کچھ محسوس ہوتا ہے یا نہیں. یہ جھوٹ بولتا ہے. جب ہم نے اسے پکڑا اور چھونا شروع کیا تو فوری طور پر اس کے جھوٹ کاپول کھل گیا.ہم صرف یہی جاننا چاہتی تھیں. اس کے بعد ہم نے اسے چھوڑ دیا تھا. ہم نے اس کیساتھ زیادتی نہیں کی. اس حوالے سے یہ جھوٹ بول رہا ہے.“

You cannot copy content of this page