بھارت میں جنسی زیادتی کا ایسا ’’انتہائی شرمناک ‘‘ واقعہ کہ جسے جان کر ہی انسانیت دم توڑ دے , جنسی درندہ کو ن اور متاثرہ بچی کی عمر کیا تھی ؟جان کر ہی آپ کی آنکھوں سے آنسو رواں ہو جائیں گے


ھارت میں جنسی زیادتی اور ریپ کے واقعات کی تعداد میں روز بروز اضافہ ہوتا جا رہا ہے ،جبکہ سول سوسائٹی کی جانب سے ان واقعات پر آواز بلند کرنے پر بھی مودی حکومت نے ابھی تک سفاک درندوں کے خلاف کوئی موثر اقدام نہیں اٹھایا جس کی وجہ سے ہر روز کوئی ایسے شرمناک واقعات سامنے آتے ہیں کہ انسان کا سر ہی شرم سے جھک جائے لیکن دہلی سے متصل’’ گروگرام‘‘ میں ایک معصوم طالب علم کے بہیمانہ قتل کے بعد اب دہلی میں ہی ایک ایسی ہولناک واردات سامنے آئی ہے کہ جس کی تفصیلات جان کر ہی انسان ہل کر رہ جائے ،سکول میں کام کرنے والے ایک ملازم نما درندے نے ’’نرسری کلاس ‘‘ کی 5سالہ معصوم کلی کو اپنی جنسی ہوس کا نشانہ بنا دیا ،متاثرہ بچی کو انتہائی تشویش ناک حالت میں ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے جہاں اس کی حالت نازک بتائی جا رہی ہے . بھارتی نجی ٹی وی ‘‘انڈو ٹی وی ‘‘ کے مطابق مشرقی دہلی کے علاقے گاندھی نگر میں واقع ٹیگور پبلک سکول میں کام کرنے والے جنسی درندے نے اپنی ہوس کا نشانہ بناننے کے لئے نرسری کلاس کی ننھی منی کلی کا انتخاب کیا

اور اسے سکول کے اندر بنے سٹورروم میں لے جا کر اسے مسلتے ہوئے درندگی کی انتہا کر دی ،5سال کی متاثرہ طالبہ کو لوک نائک جے پرکاش ہسپتال میں داخل کرایا گیا ہے ، جہاں اس کی حالت نازک بتائی جارہی ہے.

جبکہ پولیس نے اس وحشی درندے کو گرفتار کرتے ہوئے پوسکو ایکٹ کے تحت کے معاملہ درج کر لیا ہے اور مزید تفتیش کے لئے اسے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا گیا .واقعہ کی اطلاع ملتے ساتھ ہی لوگوں نے اس انتہائی شرمناک واقعہ پر سخت احتجاج کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ اس درندے کو جیل بھیجنے کی بجائے سرعام پھانسی دی جائے .

You cannot copy content of this page