اب جس کسی کے موبائل فون میں فحش فلمیں ہونگی وہ پکڑا جائے گا


کمپالا: (ویب ڈیسک) افریقی ملک یوگنڈا نے فحش فلموں کی روک تھام کیلئے ایک خصوصی ادارہ قائم کر دیا ہے جس کا کام ان کے پھیلاؤ کو روکنا ہے۔ پورنوگرافی کنٹرول کمیشن نامی اس نئے محکمے میں اب تک درجنوں لوگوں کو بھرتی کیا جا چکا ہے۔ یہ محکمہ انٹرنیٹ سے فحش فلمیں ڈاؤن کرنے اور انھیں پھیلانے والے افراد کی نشاندہی کرے گا۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق یوگنڈا میں اب جس کسی کے موبائل فون میں فحش فلمیں ہونگی وہ پکڑا جائے گا۔ اس کام کیلئے ایک خصوصی سافٹ ویئر بنایا گیا ہے جو شہریوں کے موبائل فونز کی جانچ پڑتال کرے گا۔ اگر کسی کے موبائل سے فحش فلمیں برآمد ہو گئیں تو اس کا ٹھکانہ جیل ہو گا اور اسے 2 سال قید کی سزا ہو سکتی ہے۔

یوگنڈا کی وزیر اخلاقیات سمن لکوڈو کا نئے محکمے کے مقاصد بتاتے ہوئے کہنا تھا کہ اس اقدام کا مقصد معاشرے میں بڑھتی ہوئی بے راہ روی کا خاتمہ کرنے کی کوشش ہے، کیونکہ معاشرے میں جرائم کی ایک بڑی وجہ یہ فحش فلمیں ہی ہیں۔ خیال رہے کہ یوگنڈا بر اعظم افریقا کا ایک اہم ملک ہے جس کی زیادہ تر آبادی مسیحی افراد پر مشتمل ہے۔

You cannot copy content of this page