خاتون کو شوہر پر شک، پیچھا کرتے کرتے ہوٹل کے کمرے میں جاپہنچی تو ایک اور لڑکی کے ساتھ رنگے ہاتھوں پکڑلی


ہنوئی(اردو آفیشل22-جولائی-2017) عورتوں پر مردوں کے مظالم کے واقعات تو سامنے آتے رہتے ہیں لیکن ویتنام میں ایک عورت نے ہی دوسری عورت پر ایسا ظلم ڈھا دیا کہ جس کا تصور کبھی کسی اوباش ترین مرد نے بھی نہ کیا ہو گا.  میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق یہ لرزہ خیز واقعہ ویتنام کے شمالی شہر تھائی نگوئن میں پیش آیا جہاں ایک خاتون نے اپنے شوہر کی مبینہ ناجائز محبوبہ کو ایک ہوٹل کے کمرے میں پکڑ کر اس کے ساتھ انسانیت سوز سلوک کیا.

رپورٹ کے مطابق 23 سالہ لائی شینل کو اپنے شوہر کے کردار پر شک تھا اور وہ کچھ دنوں سے اس کی جاسوسی کررہی تھی. گزشتہ روز اس نے اپنی تین سہیلیوں کے ہمراہ شوہر کا تعاقب کیا اور ایک ہوٹل کے کمرے میں شوہر اور اس کے ساتھ موجود لڑکی کو رنگے ہاتھوں جا پکڑا. لائی کا شوہر تو فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا تاہم اس نے اور اس کی سہیلیوں نے ملکر لڑکی کو دبوچ لیا. ان چاروں نے لڑکی کو برہنہ کر کے اس کے نازک اعضاءمیں مرچیں ڈال دیں جبکہ باقی ماندہ مرچیں اس کے سارے جسم پر چھڑک دیں. لائی اور اس کی سہیلیاں اپنے ساتھ خاص طور پر اسی مقصد کیلئے مرچوں کا پیکٹ لے کر آئی تھیں. انہوں نے ظلم کا نشانہ بننے والی لڑکی کی تصاویر بھی بنائیں اور انہیں انٹرنیٹ پر پوسٹ کر دیا. یہ تصاویر سامنے آنے کے بعد پورے ملک میں ہنگامہ برپاہوگیا اور ظالم خاتون اور اس کی سہیلیوں کے خلاف سخت ترین کارروائی کا مطالبہ کیا جارہا ہے. پولیس کا کہنا ہے کہ انہیں متاثرہ لڑکی کی جانب سے تاحال کوئی شکایت موصول نہیں ہوئی تاہم تصاویر سوشل میڈیا میں سامنے آنے کے بعد شکایت کی عدم موجودگی میں بھی ملزمہ کے خلاف کارروائی کی جاسکتی ہے.

You cannot copy content of this page