شوہرکے تشددسے تنگ معروف کرکٹرکی اہلیہ مددکے لیے کرکٹ بورڈ کے آفس پہنچ گئیں


میر پور(سپورٹس ڈیسک) بنگلا دیشی فاسٹ باؤلر محمد شاہد کی اہلیہ فرزانہ اختر اپنے شوہر کی جانب سے مبینہ ذہنی اور جسمانی تشدد سے تنگ آ کر مدد کیلئے بنگلا دیشی کرکٹ بورڈ کے دفتر پہنچ گئیں۔ انہوں نے الزام لگایا کہ محمد شاہد امید سے ہونے پر بچہ ضائع کرانے پر مجبور کرتا تھا۔ وہ شوہر کے ساتھ رہنا چاہتی ہیں

، مگر اس سلسلے میں بورڈ کا تعاون چاہیے۔ انہوں نے دھمکی دی کہ اگر بی سی بی نے اس معاملے پر ساتھ نہ دیا تو وہ محمد شاہد کے خلاف قانونی چارہ جوئی کریں گی۔دوسری جانب میڈیا رپورٹس کے مطابق فرزانہ نے بتایا کہ بنگلا دیشی کرکٹ بورڈ نے ان کے تحفظات اور مشکلات دور کرنے کی حامی بھری ہے تاہم اگر وہ ایسا کرنے میں ناکام رہے تو میرے پاس میڈیا کے سامنے جانے کے علاوہ کوئی اور راستہ نہیں بچے گا۔ انہوں نے بتایا کہ دونوں خاندانوں نے مسئلے کے حل کیلئے محمد شاہد سے بات کی لیکن وہ ناکام رہے۔ میڈیا کے مطابق شاہد اور فرزانہ کی شادی 2011ء میں انجام پائی تھی۔ دونوں ہنسی خوشی اپنی زندگی بسر کر رہے تھے تاہم محمد شاہد کو قومی ٹٰم میں نمائندگی ملنے کے کچھ عرصے بعد دونوں کے ریلیشن میں بگاڑ پیدا ہونا شروع ہو گیا۔ خبریں ہیں کہ موصوف کو شہرت کی چکا چوند لے کر بیٹھ گئی ہے اور وہ مختلف خواتین کے چکر میں پھنس گئے ہیں۔ دوسری جانب محمد شاہد نے دعویٰ کیا ہے کہ بی سی بی کے سربراہ نظام الدین چودھری نے اس کا گھریلو مسئلہ حل کر دیا ہے اور اب ان کی اہلیہ واپس گھر چلی گئی ہیں۔ بنگلا دیشی کرکٹ بورڈ نے ان کے تحفظات اور مشکلات دور کرنے کی حامی بھری ہے تاہم اگر وہ ایسا کرنے میں ناکام رہے تو میرے پاس میڈیا کے سامنے جانے کے علاوہ کوئی اور راستہ نہیں بچے گا۔ انہوں نے بتایا کہ دونوں خاندانوں نے مسئلے کے حل کیلئے محمد شاہد سے بات کی لیکن وہ ناکام رہے

You cannot copy content of this page