برطانوی صحافی کے بھارت میں ٹائلٹس کی کمی پر کیے گئے سوال پر انوپم کھیربرن پڑے اور اسکا زمے دار برطانیہ ہی کو ٹھہرا دیا

Indian Bollywood actor Anupam Kher announces season 2 of his show The Anupam Kher Show - Kucch Bhi Ho Sakta Hai' in Mumbai late on July 21, 2015. AFP PHOTO (Photo credit should read STR/AFP/Getty Images)

برطانوی صحافی کے بھارت میں ٹائلٹس کی کمی پر کیے گئے سوال پر انوپم کھیربرن پڑے اور اسکا زمے دار برطانیہ ہی کو ٹھہرا دیا
اُردو آفیشل۔ برطانوی صحافی نے بھارت میں ٹوائلٹس کی کمی اور نکاسی آب کے مسئلے پر سوال اٹھایا تو بالی ووڈ ادکار انوپم کھیر غصے میں آگ بگولہ ہو گئے اور اس معاملے کا ذمے دار الٹا برطانیہ کو ہی ٹھہرا دیا۔
غیر ملکی میڈیا کے مطابق معروف بھارتی ادکار انوپم کھیر اکشے کمار اور دیگر فنکاروں کے ساتھ اپنی نئی فلم ’ٹوائلٹ‘ ایک پریم کتھاکی تشہیر کے لیے برطانیہ کے دورے پر تھے کہ پریس کانفرنس کے دوران ایک برطانوی صحافی نے ان سے 70 سال گزر جانے کے باوجود بھارت میں بیت الخلا کی قلت اور نکاسی آب پر سوال کیا تو انہوں نے ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ برطانیہ نے اپنے فوائد کے لیے بھارت میں ریلوے لائنیں تو بچھائیں لیکن 200 سال میں بھارتیوں کو نکاسی آب کا بہتر نظام نہ دے سکے۔اس موقع پر اکشے کمار نے کہا کہ اس فلم کا مقصد بھی یہی ہے کہ بھارت میں نکاسی آب کے مسئلے پرعوامی شعور میں اضافہ کیا جائے۔ واضح رہے کہ یہ فلم اس سال 10 اگست کو ریلیز کی جانی ہے لیکن انٹرنیٹ پر اس کی پائریٹڈ کاپی پہلے ہی آ چکی ہے جس سے فلم کا بزنس کافی متاثر ہونے کا خدشہ ہے۔
محتاط اندازوں کے مطابق پورے بھارت میں60 فیصد آبادی کو رفع حاجت کے لیے مناسب بیت الخلا کی سہولت میسر نہیں جس کے باعث خواتین اور مردوں کو کھلے میدان میں جانا پڑتا ہے، کھلے ماحول میں رفع حاجت سے کئی امراض اور مسائل جنم لے رہے ہیں۔

You cannot copy content of this page