دجال کی آمد کی تیاریاں ، یہودی سازش بے نقاب !


نیوزی لینڈ میں مساجد پر حملہ کرنے والے شخص کی مکمل ہوچکی ہے اور اس کا مکمل نام سامنے آ چکا ہے اور اس کا مکمل بائیو ڈیٹا بھی منظر عام پر آچکا ہے یہ شخص آسٹریلیا سے تعلق رکھتا تھا اور کچھ عرصہ پہلے نیوزیلینڈ منتقل ہوا تھا بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق نیوزی لینڈ کی دو مساجد میں حملہ کرکے 49 نمازیوں کو شہید کرنے والا سفید فام آسٹریلوی شخص ایک قدامت پسند شخص تھا، جس نے اینڈرز بریوک سے متاثر ہو کر دہشت گردی کی ہولناک واردات سرانجام دی۔ برینٹن ٹیرنٹ نے 74 صفحات پر مشتمل دستاویز میں خود کو ایک عام سفید فام شہری قرار دیتے ہوئے لکھا کہ پناہ گزینوں کے شر پسند عزائم سے اپنے ملک اور شہریوں کو بچانے کے لیے میں نے کھڑے ہونے اور اسلحہ اُٹھانے کا فیصلہ کیا۔ یہ ہماری سرزمین، کلچر اور نوجوانوں کے مستقبل کے تحفظ کا معاملہ ہے اس کا کہنا تھا

کہ جنگ سے متاثر شدہ ممالک سے بڑی تعداد کے اندر مسلمان یورپ اور دیگر ممالک میں آ رہے ہیں اور ان کی روکنے کی ضرورت ہے کیونکہ یہ لوگ اپنی آبادی بڑھانے میں بڑے ماہر ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ یہ لوگ ہمارے معاشرے کے اوپر بھی اثر انداز ہوتے ہیں یہ اپنے دین کی تبلیغ کرتے ہیں اور بہت ہی چکنی چپڑی باتوں کے ذریعے لوگوں کو اپنے دین کی طرف مائل کرتے ہیں اس لیے ان کے خلاف کام کرنے کی ضرورت ہے یہ شخص کہتا تھا کہ مجھے ڈونلڈ ٹرمپ اس وجہ سے پسند ہے کیونکہ وہ سفید فام لوگو کو دوبارہ سے اٹھا رہا ہے اور ان کو ایک الگ پہچان دے رہا ہے