چند روز میں وائرل ہونے والی ویڈیو جس نے ہر آنکھ کو اشک بار کر دیا


گزشتہ دنوں سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو بہت تیزی سے وائرل ہوئی جس میں بڑی خاتون نے آہ و بکا کے ساتھ اپنی زندگی کے واقعات سنائے اور اپنے بیٹوں کی نافرمانی اور بے وفائی کے بارے میں لوگوں کو بتایاخاتون کا کہنا تھا کہ اس کے تین بیٹے ہیں ان میں سے ایک انجینئر دوسرا ڈاکٹر اور تیسرا کینیڈا میں ہوتا ہے یہ خاتون گزشتہ دنوں ایک خان صاحب کو ایک دکان کے باہر ہوتے ہی ملی تھی جس کے بعد بہت سے اپنے گھر لے آئے اور پھر اس کی ویڈیو بنا ڈالی اس خاتون کی مطابق فیصل آباد میں اس کی اپنی کوٹھی تھی چالیس سال پہلے اس کے شوہر کا تبادلہ سلام آباد ہوا اور پھر کچھ عرصہ بعد اس کے شوہر کا انتقال ہوا اس کی تینوں بیٹوں نے جائیداد بیچ ڈالی اور ماں بھول گئے ان کا کہنا تھا کہ میرا 5مرلہ گھر تھا جس کے نیچے دوکانیں بنی ہوئی تھی بچوں نے سب کچھ بیچ ڈالا اس کا کہنا تھا کہ میرے خالہ زاد بھائی بھی ہیں جو پی آئی اے میں کیپٹن کے عہدے پر تعینات ہیں خان صاحب کا کہنا تھا کہ میں ان کی بچوں کو گزشتہ دنوں زبردستی لے کر آیا تھا انہوں نے کہا کہ ہم خیال کریں گے لیکن اس کے بعد وہ بھاگ گئے اور مڑ کر نہیں پوچھا


خاتون کا کہنا تھا کہ مجھے علم نہیں کہ میرے بچے کہاں ہے میں دن کے بارے میں کافی سالوں سے کچھ نہیں جانتی خان صاحب کا کہنا تھا کہ اس خاتون کی عمر تقریبا اسی سال کے قریب ہے کیونکہ خاتون کا کہنا تھا کہ جب پاکستان آزاد ہوا تھا تو اس وقت اس کی عمر دس سال تھی یہ خاتون نے ایک باہر دکان کے تھڑے کے پاس سوئے ہوئے ملی تھی شدید سردی کی وجہ سے اس نے ترس کھایا اور اس کو اپنے گھر لے کر آئے جس کے بعد اس کے بچوں کو ڈھونڈا گیا لیکن کوئی نہ ملا صرف ایک بیٹی کا پتہ ملا جس کو ہم زبردستی لے کر آئے تاکہ اپنی ماں کی حالت دیکھ سکے لیکن انھوں نے کہا کہ ہم واپس آئیں گے اور ان کو لے کر جائیں گے ان کے جانے کے بعد نام کی کوئی خبر نہ کوئی اتا پتا چل سکا

You cannot copy content of this page