پاکستان کا وہ علاقہ جہاں خوفناک فسادات پھوٹنے والے ہیں، برطانوی حکومت نے خبردار کر دیا


برطانوی دارلعوام نے وزیر اعظم پاکستان کو صوبہ پنجاب ضلع خوشاب کے تین مسیحی گائوں میں ممکنہ پرتشدد واقعات پھوٹنے کے خطرے کے پیش نظر لوگوں کو تحفظ فراہم کرنے کیلئے خط تحریر کردیا ہے جس کے بعد وزیر اعظم کی ہدایات پر وفاقی وزیر برائے شماریات سینیٹر کامران مائیکل خوشا ب پہنچ گئے ۔ ذرائع کے مطابق برطانوی پارلیمنٹ کے ممبر اور چیئرمین ، پاکستانی اقلیت جم شانون Jim Shannon نے وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کو ایک خط لکھا ہے جس میںضلع خوشاب کے تین مسیحی گائوں26, 37اور 38ڈی، بی کے لوگوں کو تحفظ فراہم کرنے کی درخواست کی گئی ہے۔
آن لائن کو حاصل ہونے والی خط کی کاپی کے مطابق گزشتہ چند روز سے تحصیل قائدآباد، ضلع خوشاب کے تین گائوں تشدد پسند عناصر کی وجہ سے عد م تحفظ کا شکار ہوئے۔ خط میں وزیر اعظم پاکستان کو درخواست کی گئی کہ وہ قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ذریعے علاقے کے لوگوں کو تحفظ فراہم کرے۔ ذرائع کے مطابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے وفاقی وزیر سینیٹر کامران مائیکل کوضلع خوشاب پہنچنے کی ہدایات جار ی کردی۔
سینیٹر کامران مائیکل نے آئن لائن سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ چند روز سے علاقے میں کشید گی کی اطلاع ملنے پر انہوںنے ضلع خوشاب کے ڈی ، پی ، او (DPO) وقاص حسن اور آر ، پی ، اور سے رابطہ کیا اورقانون نافذ کرنے والے اداروںکو متاثرہ علاقے میں امن وامان قائم کرنے کی ہدایات جاری کردی تھیں، انہوںنے کہا کہ وہ متعلقہ علاقے کی انتظامیہ سے مسلسل رابطے میں ہیں اور آج وزیراعظم کی ہدایت کے مطابق خوشاب میںموجود ہونگے۔
کامران مائیکل نے بتایا کہ فی الحال حالات کنڑول میں ہیں اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکارعلاقے کے لوگوں کو تحفظ فراہم کرنے کیلئے موجود ہیں۔واضع رہے کہ ضلع خوشاب میں گزشتہ چند روز کے دوران ذاتی تنازعہ کو مذہبی رنگ دینے کی کوشش کی مگر متعلقہ علاقے کی انتظامیہ نے بروقت کاروائی کرکے حالات کو اپنے کنٹرول میںلے لیا۔

You cannot copy content of this page