زیادتی ہوئی لیکن تشدد کا ایک بھی نشان نہیں؟؟؟رشتہ داری بھی تھی؟؟؟ملتان میں ادلے بدلے کی زیادتی کے حیران کن حقائق سامنے آگئے


ملتان (اردو آفیشل ) جنوبی پنجاب کے علاقے میں زیادتی کے بدلے زیادتی کے اندوہناک واقعے بارے لرزہ تفصیلات سامنے آگئیں۔ ذرائع کے مطابق 17 سالہ لڑکی سے زیادتی کا حکم دینے والی پنچایت اور دونوں فریقین میں رشتہ داری تھی۔ پنچائت کا سربراہ متاثرہ لڑکی کا چچا ہے۔ جس نے زیادتی کے بدلے زیادتی کرنے کا حکم دیا۔ دوسری جانب متاثرہ لڑکی کی ابتدائی میڈیکل رپورٹ میں بتایا گیا کہ تشدد کے کوئی نشانات نہیں ملے۔مزید تحقیقات کے لیے نمونے لاہور میں فرانزک لیبارٹری کو بھجوا دئے گئے ہیں۔

افسوسناک واقعہ کے پیش نظر وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف ملتان پہنچ گئے ہیں جہاں وہ داد رسی سینٹر میں دونوں متاثرہ لڑکیوں سے ملاقات کریں گے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب بذریعہ ہیلی کاپٹر داد رسی سینٹر روانہ ہوں گے۔

You cannot copy content of this page