عدالت نے دبئی میں پاکستانی لڑکی کی لاش چھپانے والے 4ملزمان کو قید کی سزا سنا دی


دبئی (اردو آفیشل)یو اے ای کی عدالت نے 19سالہ پاکستانی لڑکی کو نوکری کے بہانے دبئی بلا کر جسم فروشی پر مجبور کرنے اور پھر معمولی جھگڑے پر قتل کرنے والے ایجنٹ جبکہ لاش چھپانےوالے دیگر 3 ملزمان کو قید کی سزا سنا دی ۔ عدالت نے سزا کی تکمیل کے بعد مجرموں کو ملک بدر کرنے کا حکم بھی سنایا ۔


”گلف نیوز “ کے مطابق متحدہ عرب امارات کی عدالت نے 19سالہ پاکستانی لڑکی کی لاش چھپانے کے جرم کا اعتراف کرنے والے 4ملزمان کو ایک ایک سال قید کی سزا سناد ی ، لڑکی کو دبئی میں نوکری کا جھانسہ دیکرایک ایجنٹ نے پاکستان سے بلایا او رپھر زبردستی جسم فروشی کے کام پر لگا دیا، ملزم نے گزشتہ سال معمولی جھگڑے پر اسے قتل کر دیا تھاجس کے بعد اس کے ساتھیوں نے لڑکی کی لاش چھپانے کا جرم کیا ۔
جرم کرنے کے بعد ایجنٹ ملک چھوڑ کر فرار ہو گیا تھا تاہم دیگر 4ملزمان نے لڑکی کی لاش ایک تھیلے میں ڈالی اور 15گھنٹے تک اپنے فلیٹ میں رکھی جس کے بعد دبئی سے دور ام القواین کے علاقے میں جا کر چھپا دی تھی ۔
مجرمان جن کی عمریں26سے37سال کے درمیان ہیں انہیں سی سی ٹی وی فوٹیج کی مدد سے شناخت کیا گیا۔ وہ خاتون کی لاش کو الرفاسے اٹھا کر اپنی کار میں رکھ رہے تھے اور بعد ازاں اسے ام القواین کی جانب لے گئے جہاں انہوں نے اسے جھاڑیوں کے پیچھے چھپا دیا تھا۔خاتون کی لاش صفائی کرنے والے افراد کو ملی۔ جسے شناخت کے لئے لے جایا گیا۔ پولیس کے مطابق خاتون کو تفریحی ویزے پرطوائف کے طور پر لایا گیا مگر بعد ازاں خاتون نے یہاں سے بھاگنے کی کوشش کی لیکن اسے مسلسل جنسی تشدد کا نشانہ بنایا جاتا رہا۔ آدمی کی بات نہ ماننے پر خاتون کو قتل کردیا گیا۔

You cannot copy content of this page