میں 12 سالہ بچی کا بدلہ لینے جا رہا ہوں


نیوزی لینڈ کے شہر چرچ میں جو کچھ ہوا وہ سب کے سامنے ہے ایک سفید فام نے مسلمانوں کو ایسے گولیوں سے بونا جیسے اسے گیم کے اندر مخالف کو مارا جاتا ہے اس کے بعد صورتحال دیکھنے کو ملی اور جس طرح اس کو ڈیفنڈ کیا جا رہا ہے اور اس کو نفسیاتی مریض ثابت کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے وہ اس سے زیادہ تکلیف دہ ہے یہ شخص آسٹریلیا سے تعلق رکھنے والا تھا اس کے والدین کینسر کی بیماری سے مر گئے تھے یہ کام کرنے کے بعد اس کو دنیا بھر میں گھومنے کا شوق پیدا ہوا اور اس کے ساتھ یہ دنیا کے مختلف ممالک میں سیر و سیاحت کی غرض سے گیا لیکن جب اس نے واپسی کی تو اس کے بعد اس کے خیالات بدل گئے اور اس نے اپنے فیس بک اکاؤنٹ سے ٹوئٹر اور دوسرے اکاؤنٹ سے مسلسل مسلمانوں کے خلاف نفرت انگیز مواد شروع کردیا

اور ساتھ میں اپنے ہم وطن لوگوں کو وہ کتبابھارتا رہا ہے کہ جو مسلمان یہاں پر آ رہے ہیں ان کو یہاں سے مار بھگایا جائے اور یہ کل ہمارے معاشرے پر قبضہ کرلیں گے اس کے ساتھ یہ شخص ڈونلڈ ٹرمپ سے بہت زیادہ متاثر تھا اس کا کہنا تھا کہ ڈونلڈ ٹرمپ جیسے شخص ہمارے ملک کے لیے بھی ضروری ہے کیوں کہ یہ سفید فاموں کے حقوق کی بات کرتا ہے اور ان کو دنیا کی سب سے عظیم قوم سمجھتا ہے یہ کس سے زیادہ متاثر تھا اور اس کے خیالات کیا تھے اور اس سے پہلے کیا کرتا رہا اس کے بارے میں جاننے کے لئے ویڈیو ملاحظہ کریں