حجاب کو ہٹا کر اربوں ڈالرز کا فائدہ


حدیث مبارکہ کا مفہوم ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ قرب قیامت میں خواتین کا لباس ایسا ہو گا کہ اس سے سارا جسم نظر آتا ہوگا اور ان کے سر اونٹ کے کوہان کی مانند ہوں گے اس وقت اگر آپ اپنے ارد گرد نظر دوڑائیں تو آپ کو فیشن کے نام پر بے حیائی اور بدتمیزی کا ایک طوفان نظر آئے گا اگر خاتون صرف اپنا سر ڈھانپ لے تو اس کی وجہ سے کھربوں روپے کا بزنس ختم ہوجائے گا اور اگر وہ میک اپ کرنا چھوڑ دے تو ممکن ہے تمام فیشن انڈسٹری بالکل بند ہو جائے خواتین کو گھر سے اسے وجہ سے نکالا جاتا ہے اور آزادی کے نام پر ان کو مارکیٹ میں اسی لیے لایا جاتا ہے تاکہ یہ تمام بزنس چلائے جا سکے ماہرین کا کہنا ہے کہ امریکہ اور ایسے دیگر ممالک ہیں جہاں پر لوگ سن باتھ لیتے ہیں وہاں پر کینسر سب سے زیادہ ہے اور خاص کر وہ کینسر چیز کو جلدی کینسر کہا جاتا ہے اسلام نے عورتوں کو بناؤ سنگھار سے منع نہیں کیا اور نہ ہی اچھا لباس پڑھنے سے منع فرمایا ہے

اسلام عورت کوحدود میں رکھتا ہے اسلام عورت کو یہ کہتا ہے کہ تمہارا بناؤ سنگھار سے اپنے شوہر کے لیے اچھا لباس اللہ اللہ کی رضا کے لیے ہو لیکن جدید میڈیا جدید اذہان اور خود کو لبرل کرنے والے عورتوں کو اپنی گھر کی چاردیواری سے باہر نکالنے کے لئے ہر ممکن اقدامات کر رہے ہیں جو کہ نہ صرف ان کو اپنے نظریات کی ترویج کے لئے ایک طاقت حاصل ہوتی ہے بلکہ اس کے ساتھ ساتھ کھربوں روپے کی جو انڈسٹری ہے اس کو بھی کسٹمر میسر ہوتے ہیں بالی ووڈ اس وقت دنیا کی سب سے بڑی انڈسٹری ہے روزانہ کے حساب سے کی فلمیں ریلیز ہوتی ہے اور سالانہ کہیں ہزار فلمیں ریلیز ہوتی ہیں مختلف چھوٹی بڑی زبانوں کے اندر چلنے بنتی ہے کس نے یہی دکھایا جاتا ہے کہ کیسے خود کو خوبصورت بنایا جا سکتا ہے اور کیسا لباس استعمال کر کے عورت ہوں دکھائی دے سکتی ہے اس کا اثر سب سے زیادہ پڑھ رہا ہے اور اس وقت کاسمیٹکس استعمال کرنے میں سب سے آگے نظر آتے ہیں اور وہاں پر اس کی وجہ سے ایسی نہیں بیماریاں سامنے آ رہی ہے جس کا کبھی کس نے تصور نہ کیا ہو گا مزید تفصیلات کے لیے ویڈیو ملاحظہ فرمائیے

You cannot copy content of this page