ہمارے ہتھیلی پر لکیریں دراصل کیوں ہوتی ہیں، ان کا قسمت کے حال سے لینا دینا نہیں بلکہ۔۔۔ سائنسدانوں نے بالآخر معمہ حل کردیا، ہاتھوں کی لکیروں کا اصل اور انتہائی حیران کن فائدہ بتادیا


ہاتھوں کی لکیروں کے متعلق کہا جاتا ہے کہ ان میں انسان کی قسمت کے راز پوشیدہ ہوتے ہیں لیکن اب سائنسدانوں نے ان لکیروں کا معمہ حل کر دیا ہے اور آپ یہ جان کر حیران ہوں گے کہ ان کا قسمت کے حال کے ساتھ کچھ لینا دینا نہیں ہے۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ”یہ لکیریں کسی بھی بچے میں اس وقت پیدا ہوتی ہیں جب ماں کے پیٹ میں اس کی عمر 12ہفتے کی ہوتی ہے۔ ان لکیروں کا اصل فائدہ ہتھیلی اور انگلیوں کی آزادانہ حرکت اور مختلف چیزوں کو پکڑنے کی صلاحیت ہے۔ اگر یہ لکیریں نہ ہوں تو ہمیں ہاتھوں سے چیزوں کو گرفت میں لینے میں دشواری پیش آئے گی۔“

ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں کا کہنا تھا کہ ”زیادہ تر لوگ جب پیدا ہوتے ہیں ان کی ہتھیلیوں میں 3نمایاں لکیریں ہوتی ہیں۔ ان لکیروں کی موٹائی ہر شخص کے جینز پر منحصر ہوتی ہے۔دنیا میں ہر 30میں سے 1بچے کی ہتھیلیوں میں صرف ایک نمایاں لکیر ہوتی ہے۔ یہ بسااوقات کئی طرح کے طبی مسائل کی علامت ہوتی ہے جن میں ڈاﺅنز سنڈروم(Down’s syndrome)، خطرناک الکوحل سنڈروم، ٹرنر سنڈروم وغیرہ شامل ہیں۔“

You cannot copy content of this page